Loading...

Najdi Fitna- ذاکر منکر سورت الانبیاء آیت 107اور وسیلہ

3,487 views

Loading...

Loading...

Loading...

Rating is available when the video has been rented.
This feature is not available right now. Please try again later.
Published on Apr 25, 2010

سُوۡرَةُ البَقَرَة-89 دنیا میں آمد سے پہلے بھی آپ علیہ وسلم کے وسیلہ سے دعائیں مانگی جاتی تھیں حدیث شریف میں بھی حکم وسیلہ ملتا ہے
سُوۡرَةُ البَقَرَة-89
وَلَمَّا جَآءَهُمۡ كِتٰبٌ مِّنۡ عِنۡدِ اللّٰهِ مُصَدِّقٌ لِّمَا مَعَهُمۡۙ وَكَانُوۡا مِنۡ قَبۡلُ يَسۡتَفۡتِحُوۡنَ عَلَى ‌ۖۚ فَلَمَّا جَآءَهُمۡ مَّا عَرَفُوۡا کَفَرُوۡا بِهٖ‌ الَّذِيۡنَ كَفَرُوۡا فَلَعۡنَةُ اللّٰهِ عَلَى الۡكٰفِرِيۡنَ‏
ترجمہ
"اورجب ان کے پاس الله کی وہ کتاب (قرآن) آئی جو ان کے ساتھ والی کتاب (توریت ) کی تصدیق فرماتی ہے اور اس سے پہلے وہ اسی نبی کے وسیلہ سےکافروں پر فتح مانگتے تھے تو جب تشریف لایا ان کے پاس وہ جانا پہچانا اس سے منکرھوبیٹھے تو الله کی لعنت منکروں پر"
سُوۡرَةُ التّوبَة - 99
وَمِنَ ٱلۡأَعۡرَابِ مَن يُؤۡمِنُ بِٱللَّهِ وَٱلۡيَوۡمِ ٱلۡأَخِرِ وَيَتَّخِذُ مَا يُنفِقُ قُرُبَـٰتٍ عِندَ ٱللَّهِ وَصَلَوَٲتِ ٱلرَّسُولِ‌ۚ أَلَآ إِنَّہَا قُرۡبَةٌ۬ لَّهُمۡ‌ۚ سَيُدۡخِلُهُمُ ٱللَّهُ فِى رَحۡمَتِهِۦۤ‌ۗ إِنَّ ٱللَّهَ غَفُورٌ۬ رَّحِيمٌ۬
ترجمہ
"اور بادیہ نشینوں میں (ہی) وہ شخص (بھی) ہے جو االله پر اور یوم آخرت پر ایمان رکھتا ہے اور جو کچھ (راہ خدا میں) خرچ کرتاہے اسے الله کے حضور تقرب اور رسول (صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم) کی (رحمت بھری) دعائیں لینے کا ذریعہ سمجھتا ہے, سن لو! بیشک وہ ان کے لئے باعث قرب الہی ہے, جلد ہی االله انہیں اپنی رحمت میں داخل فرما دے گا. بیشک اللہ بڑا بخشنے والا نہایت مہربان ہے"
سوۡرَةُ النِّسَاء - 64
وَمَاۤ اَرۡسَلۡنَا مِنۡ رَّسُوۡلٍ اِلَّا لِـيُـطَاعَ بِاِذۡنِ اللّٰهِ ‌ؕ وَلَوۡ اَنَّهُمۡ اِذْ ظَّلَمُوۡۤا اَنۡفُسَهُمۡ جَآءُوۡكَ فَاسۡتَغۡفَرُوا اللّٰهَ وَاسۡتَغۡفَرَ لَـهُمُ الرَّسُوۡلُ لَوَجَدُوا اللّٰهَ تَوَّابًا رَّحِيۡمًا‏
ترجمہ
"اور ہم نے جو پیغمبر بھیجا ہے اس لئے بھیجا ہے کہ خدا کے فرمان کے مطابق اس کا حکم مانا جائے اور یہ لوگ جب اپنے حق میں ظلم کر بیٹھے تھے اگر تمہارے پاس آتے اور خدا سے بخشش مانگتے اور رسول (خدا) بھی ان کے لئے بخشش طلب کرتے تو خدا کو معاف کرنے والا (اور) مہربان پاتے"
حدیث شریف ہے
شرح صحیح مسلم صفہ 313 اور سنن ابن ماجہ صفہ 99
نبی علیہ اسلام نے ایک نابینا کو دعا تعلیم فرمائی اس میں یہ الفاظ ہیں
اللهم اني اسألك واترجه اليك بہحمد نبي الرحمتہ یا محمد انی قد توجھت بك الي ربي في حاجتي هذة لتقضي اللهم فشنعہ فی
ترجمہ
"اے الله میں تجھ سے سوال کرتا ہوں اور تیری طرف
محمّد نبی رحمت علیہ اسلام کے وسیلہ
سے متوجہ ہوتا ہوں،
یا محمّد
میں آپ کے وسیلہ سے
اپنی اس حاجت میں اپنے رب کی طرف متوجہ ہوتا ہوں تاکہ یہ حاجت پُوری ہو
اے الله
حضور کی شفاعت کو میرے حق میں قبول فرما"

Loading...

to add this to Watch Later

Add to

Loading playlists...