Loading...

Kalam-e-Iqbal by Khurshid Begum - Anokhi waza hai sare zamane se nirale haiN

5,178 views

Loading...

Loading...

Loading...

Rating is available when the video has been rented.
This feature is not available right now. Please try again later.
Published on Nov 5, 2010

Poet::Allama Muhammad iqbal
Singer: Khurshid Begum
Book: Bang-i Dara (1924)
Iqbal's month Special
I hope all of you ll like this rare track of Kalam-e-Iqbal after Iqbal Bano's rare track..i ll try to bring some more rare gems of Kalam-e-Iqbal in coming days :)

Kalam-E-Iqbal
Anokhi waza hai saaray zamanay say niralay haiN
yeh Aashiq konsi basti kay yarab rehnay walay haiN

انوکھی وضع ہے، سارے زمانے سے نِرالے ہیں
یہ عاشِق کون سی بستی کے یاربّ رہنے والے ہیں

علاجِ درد میں بھی درد کی لذّت پہ مرتا ہوں
جو تھے چھالوں میں کانٹے، نوکِ سوزن سے نکالے ہیں

پھلا پھولا رہے یا ربّ ! چمن میری اُمیدوں *کا
جگر کا خون دے دے کر یہ بُوٹے میں نے پالے ہیں

رُلاتی ہے مجھے خوابوں میں خاموشی ستاروں کی
نِرالا عشق ہے میرا، نِرالے میرے نالے ہیں

نہ پُوچھو مجھ سے لذّت خانماں برباد رہنے کی
نشیمن سینکڑوں میں نے بنا کر پُھونک ڈالے ہیں

نہیں بیگانگی اچھی رفیقِ راہِ منزل سے
ٹھہر جا اے شرر، ہم بھی تو آخر مِٹنے والے ہیں

اُمیدِ حُور نے سب کچھ سِکھا رکھا ہے واعظ کو
یہ حضرت دیکھنے میں سیدھے سادے بھولے بھالے ہیں

میرے اشعار اے اقبال! کیوں پیارے نہ ہوں مجھ کو
میرے ٹُوٹے ہوئے دل کے یہ درد انگیز نالے ہیں

Loading...

to add this to Watch Later

Add to

Loading playlists...