Loading...

Iqbal: Maan ka Khwab (Tableau) - اقبال: ماں کا خواب ٹیبلو

155,002 views

Loading...

Loading...

Loading...

Rating is available when the video has been rented.
This feature is not available right now. Please try again later.
Published on Aug 8, 2009

Tableau on 'Maan ka Khwab', poem for children from Baang-i-Dara (The Call of the Marching Bell; 1924), the third book of poetry by Allama Iqbal, accompanied by musical rendition of the poem and preceded by a brief introduction for beginners by Muhammad Suheyl Umar, Director, Iqbal Academy Pakistan.

The tableau is included in Iqbal ki Phulwari, a DVD for schools and educational institutions. In Urdu.

Starring: Shujaat Hashmi and young talent. Conceived and Directed by Shujaat Hashmi; Executive Producer: Muhammad Suheyl Umar. Copyright 2007 Iqbal Academy Pakistan, Federal Ministry of Culture (www.allamaiqbal.com).

ماں کا خواب
(ماخو ذ(
بچوں کے ليے

ميں سوئي جو اک شب تو ديکھا يہ خواب
بڑھا اور جس سے مرا اضطراب
يہ ديکھا کہ ميں جا رہي ہوں کہيں
اندھيرا ہے اور راہ ملتي نہيں
لرزتا تھا ڈر سے مرا بال بال
قدم کا تھا دہشت سے اٹھنا محال
جو کچھ حوصلہ پا کے آگے بڑھي
تو ديکھا قطار ايک لڑکوں کي تھي
زمرد سي پوشاک پہنے ہوئے
ديے سب کے ہاتھوں ميں جلتے ہوئے
وہ چپ چاپ تھے آگے پيچھے رواں
خدا جانے جانا تھا ان کو کہاں
اسي سوچ ميں تھي کہ ميرا پسر
مجھے اس جماعت ميں آيا نظر
وہ پيچھے تھا اور تيز چلتا نہ تھا
ديا اس کے ہاتھوں ميں جلتا نہ تھا
کہا ميں نے پہچان کر ، ميري جاں!
مجھے چھوڑ کر آ گئے تم کہاں!
جدائي ميں رہتي ہوں ميں بے قرار
پروتي ہوں ہر روز اشکوں کے ہار
نہ پروا ہماري ذرا تم نے کي
گئے چھوڑ ، اچھي وفا تم نے کي

جو بچے نے ديکھا مرا پيچ و تاب
ديا اس نے منہ پھير کر يوں جواب
رلاتي ہے تجھ کو جدائي مري
نہيں اس ميں کچھ بھي بھلائي مري
يہ کہہ کر وہ کچھ دير تک چپ رہا
ديا پھر دکھا کر يہ کہنے لگا
سمجھتي ہے تو ہو گيا کيا اسے؟
ترے آنسوئوں نے بجھايا اسے

Loading...

Advertisement
When autoplay is enabled, a suggested video will automatically play next.

Up next


to add this to Watch Later

Add to

Loading playlists...